صفحه اصلی » خبریں » سیاسی » ونیزویلا کے خلاف نئی امریکی پابندیوں پر، مادورو کی کڑی تنقید

ونیزویلا کے خلاف نئی امریکی پابندیوں پر، مادورو کی کڑی تنقید

شائع کیا گیا 10 مارس 2015میں | کیٹیگری : سیاسی
فونٹ سائز

ونیزویلا کے صدر نکولس مادورو نے اپنے ملک کے خلاف نئی امریکی پابندیوں پر کڑی تنقید کی ہے۔
اطلاعات کے مطابق ونیزویلا کے صدر نکولس میدورو نے ان پابندیوں کا مقصد ان کی حکومت گرانے کی کوشش قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے ملک کی، جن شخصیات اور عہدیداروں کے خلاف واشنگٹن نے پابندیاں عائد کی ہیں وہ ہمارے قومی ہیرو ہیں۔ ونیزویلا کے صدر نے قومی ٹیلیویژن چینل سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صدر بارک اوبامہ، امریکی امپریالسٹوں کی نمائندگی میں ونیزویلا کے اندرونی امور میں مداخلت اور ان کی حکومت گراکر، ان کے ملک کا کنٹرول سنبھالنے کے مشن کو آگے بڑھانے کی کوشش کررہے ہیں۔ صدر نکولس میدورو نے اپنے ملک کی سات اہم شخصیات پر امریکی پابندیوں کو ہدف تنقید بناتے ہوئے، ان میں سے ایک شخصیت کو اپنے ملک کا وزیرداخلہ بنادیا ہے۔ انھوں نے امریکی پابندیوں کی بنا پر ان سات شخصیات کو مبارک باد بھی پیش کی۔

واضح رہے کہ امریکی صدر بارک اوبامہ نے پیر کے روز ونیزویلا کے داخلی امور میں مداخلت کرتے ہوئے اس ملک کی سات اہم شخصیات کے خلاف تادیبی اقدامات عمل میں لائے جانے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ وھائٹ ہاؤس کے ترجمان جاش ارنسٹ نے ایک بیان میں ونیزویلا کی ان شخصیات پر، کرپشن میں ملوّث ہونے اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ ونیزویلا کی وزیرخارجہ نے بھی امریکہ کے اس اقدام پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ واشنگٹن کے اس اقدام کا جلد ہی جواب دیا جائے گا۔

متعلقہ مضامین
کمینٹس

جواب دیں

نشانی ایمیل شما منتشر نخواهد شد. بخش‌های موردنیاز علامت‌گذاری شده‌اند *


پنج + = 11